Subha Jaga Raat Ne Roonda Mujhe

صبح جاگا رات نے روندا مجھے

صبح جاگا رات نے روندا مجھے

اس طرح حالات نے روندا مجھے

ہاں عمارت تن کی پختہ تھی مگر

رنج کی بہتات نے روندا مجھے

تھا پزیرائی سے خائف وہ مری

اس لیے کم ذات نے روندا مجھے

اک سوال اکثر جلائے جی مرا

جانے کس کس ہاتھ نے روندا مجھے

میں سے نکلا تب یہ جانا ساقیا

مے کشوں کے ساتھ نے روندا مجھے

میں ضرورت سے زیادہ سخت تھا

ہائے پھر صدمات نے روندا مجھے

آخرش ماجد یہ عقدہ کُھل گیا

منہ سے نکلی بات نے روندا مجھے

ماجد جہانگیر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(295) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Majid Jahangir, Subha Jaga Raat Ne Roonda Mujhe in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 54 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Majid Jahangir.