Teri Ahat Jab Sunai Dey Mujhe

تیری آہٹ جب سنائی دے مجھے

تیری آہٹ جب سنائی دے مجھے

تجھ سوا پھر کیا دکھائی دے مجھے

ذائقہ چکھ لوں ذرا سا ہجر کا

یار سے اک پل جدائی دے مجھے

میں لکھوں افلاک کے قصے تمام

خاک کے اندر رسائی دے مجھے

پھنس گیا عشق و خرد کے درمیاں

کیسے رستہ پھر سجھائی دے مجھے

تو نظر سے گر گیا ہے دوستا

چل پرے ہٹ مت صفائی دے مجھے

میں گنہ کے لفظ سے نفرت کروں

پارسائی پارسائی دے مجھے

اس نہج پر اب ریاضت ہے مری

بولے گونگا اور سنائی دے مجھے

کر رہی ہے اب تقاضہ شاعری

فکرِ دنیا سے رہائی دے مجھے

وا کر اب ماجد پہ اپنی رحمتیں

حرفِ تازہ کی کمائی دے مجھے

ماجد جہانگیر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(416) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Majid Jahangir, Teri Ahat Jab Sunai Dey Mujhe in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 54 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Majid Jahangir.