Sun Li Sadaye Koh Nida Our Chal Paray

سن لی صدائے کوہ ندا اور چل پڑے

سن لی صدائے کوہ ندا اور چل پڑے

ہم نے کسی سے کچھ نہ کہا اور چل پڑے

سائے میں دو گھڑی بھی نہ ٹھہرے گزرتے لوگ

پیڑوں پہ اپنا نام لکھا اور چل پڑے

ٹھہری ہوئی فضا میں الجھنے لگا تھا دم

ہم نے ہوا کا گیت سنا اور چل پڑے

تاریک راستوں کا سفر سہل تھا ہمیں

روشن کیا لہو کا دیا اور چل پڑے

رخت سفر جو پاس ہمارے نہ تھا تو کیا

شوق سفر کو ساتھ لیا اور چل پڑے

گھر میں رہا تھا کون کہ رخصت کرے ہمیں

چوکھٹ کو الوداع کہا اور چل پڑے

مخمورؔ واپسی کا ارادہ نہ تھا مگر

در کو کھلا ہی چھوڑ دیا اور چل پڑے

مخمور سعیدی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(648) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Makhmoor Saeedi, Sun Li Sadaye Koh Nida Our Chal Paray in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 43 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Makhmoor Saeedi.