Yaad Phir Bholi Hoi Aik Kahani Aayi

یاد پھر بھولی ہوئی ایک کہانی آئی

یاد پھر بھولی ہوئی ایک کہانی آئی

دل ہوا خون طبیعت میں روانی آئی

صبح نو نغمہ بہ لب ہے مگر اے ڈوبتی رات

میرے حصے میں تری مرثیہ خوانی آئی

زرد رو تھا کسی صدمے سے ابھرتا سورج

یہ خبر ڈوبتے تاروں کی زبانی آئی

ہر نئی رت میں ہم افسردہ و دلگیر رہے

یا تو گزرے ہوئے موسم کی جوانی آئی

پا گئے زندگی نو کئی مٹتے ہوئے رنگ

ذہن میں جب کوئی تصویر پرانی آئی

خشک پتوں کو چمن سے یہ سمجھ کر چن لو

ہاتھ شادابی رفتہ کی نشانی آئی

یاد کا چاند جو ابھرا تو یہ آنکھیں ہوئیں نم

غم کی ٹھہری ہوئی ندی میں روانی آئی

دل بہ ظاہر ہے سبک دوش تمنا مخمورؔ

پھر طبیعت میں کہاں کی یہ گرانی آئی

مخمور سعیدی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(921) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Makhmoor Saeedi, Yaad Phir Bholi Hoi Aik Kahani Aayi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 43 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Makhmoor Saeedi.