Abhi Hai Dheyaan Kahan Wasal Ke Farezo Par

ابھی ہے دھیان کہاں وصل کے فریضوں پر

ابھی ہے دھیان کہاں وصل کے فریضوں پر

ابھی وہ کاڑھتی پھرتی ہے دل قمیضوں پر

قیام کرتا ہوں اکثر میں دل کے کمرے میں

کہ جم نہ جائے کہیں گرد اس کی چیزوں پر

یہی تو لوگ مسیحا ہیں زندگانی کے

ہزار رحمتیں ہوں عشق کے مریضوں پر

کسی انار کلی کے خیال میں اب تک

غلام گردشیں ماتم کناں کنیزوں پر

جلا رہی ہے مرے بادلوں کے پیراہن

پھوار گرتی ہوئی ململیں قمیصوں پر

غزل کہی ہے کسی بے چراغ لمحے میں

شب فراق کے کاجل زدہ عزیزوں پر

کہ کس دیار میں رہنا ہے کس نے کتنے دن

مسافروں کے یہ لکھا گیا ہے ویزوں پر

وہ غور کرتی رہی ہے تمام دن منصورؔ

مرے لباس کی الجھی ہوئی کریزوں پر

منصور آفاق

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(2285) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Mansoor Afaq, Abhi Hai Dheyaan Kahan Wasal Ke Farezo Par in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 19 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Mansoor Afaq.