Kahin Pey Hijar Ka Dukh Hai Kahin Wisaal Ka Dukh

کہیں پہ ہجر کا دکھ ہے کہیں وصال کا دکھ

کہیں پہ ہجر کا دکھ ہے کہیں وصال کا دکھ

مری جبیں پہ ہوا ثبت ہر ملال کا دکھ

مجھے یہ ڈر ہے کہیں خودکشی نہ کر لو تم

تمہاری زیست میں آیا اگر زوال کا دکھ

وہ اک سوال کہ جس کا جواب دے نہ سکے

ہنوز کاٹتا رہتا ہے اس سوال کا دکھ

اسی کی یاد میں گزرے گی زندگی میری

جو جاتے جاتے مجھے دے گیا کمال کا دکھ

ہماری آنکھ کی پتلی میں اشک کی صورت

چمک رہا ہے کسی شہر بے مثال کا دکھ

منصور فائز

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(894) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Mansoor Faaiz, Kahin Pey Hijar Ka Dukh Hai Kahin Wisaal Ka Dukh in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Birthday, Hope Urdu Poetry. Also there are 17 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Birthday, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Mansoor Faaiz.