Soo K Pathar K Kabhi Dekh K Soona Kiya Hai

سو کے پتھر پہ کبھی دیکھ کہ سونا کیا ہے

سو کے پتھر پہ کبھی دیکھ کہ سونا کیا ہے

تاکہ معلوم تجھے ہو یہ بچھونا کیا ہے

میری تنہائی کسی روز جو مجھ سے کھیلے

عین ممکن ہے سمجھ جاؤں کھلونا کیا ہے

بیج کوئی بھی ہو وہ جڑ تو پکڑ ہی لے گا

طے یہ کرنا ہے کہ نم خاک میں بونا کیا ہے

یوں نہ ہونے پہ مرے تجھ کو نہ حیرت ہوگی

میں اگر تجھ کو بتا دوں کہ یہ ہونا کیا ہے

ذکر وحشت میں اگر ٹوٹ گری ہے فائزؔ

چھوڑ تسبیح کے دانوں کو پرونا کیا ہے

منصور فائز

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(847) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Mansoor Faaiz, Soo K Pathar K Kabhi Dekh K Soona Kiya Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 17 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Mansoor Faaiz.