Khayal O Shoq Ko Jab Hum Teri Tasveer Karte Hain

خیال و شوق کو جب ہم تری تصویر کرتے ہیں

خیال و شوق کو جب ہم تری تصویر کرتے ہیں

تو دل کو آئینہ اور آنکھ کو تنویر کرتے ہیں

نظر کے سامنے جتنا علاقہ ہے وہ دل کا ہے

تو اس کی بے دلی کے نام یہ جاگیر کرتے ہیں

ہوا مسمار بھی کر دے اگر شہر تمنا کو

پھر اس ملبے سے قصر آرزو تعمیر کرتے ہیں

ہوائیں پڑھ کے اپنے نام کے خط جھوم جاتی ہیں

محبت سے جو پتوں پر شجر تحریر کرتے ہیں

ہمارے لفظ آئندہ زمانوں سے عبارت ہیں

پڑھا جائے گا کل جو آج وہ تحریر کرتے ہیں

منظور ہاشمی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(667) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Manzoor Hashmi, Khayal O Shoq Ko Jab Hum Teri Tasveer Karte Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 18 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Manzoor Hashmi.