Rasta Samundar Ka Jab Ruka Hua Paya

راستہ سمندر کا جب رکا ہوا پایا

راستہ سمندر کا جب رکا ہوا پایا

اور بھی کناروں کو کاٹتا ہوا پایا

دیر تک ہنسا تھا میں دوستوں کی محفل میں

لوٹ کر نہ جانے کیوں دل دکھا ہوا پایا

دھوپ نے ٹٹولا جب منجمد چٹانوں کو

برف کے تلے لاوا کھولتا ہوا پایا

سوچیے کہیں گے کیا لوگ ایسے موسم کو

جس میں سبز شاخوں کو سوکھتا ہوا پایا

میرے واسطے شاید خط میں تھا وہی جملہ

تیز روشنائی سے جو کٹا ہوا پایا

نیند کی پری آخر ہو گئی خفا ہم سے

اور کوئی آنکھوں میں جب چھپا ہوا پایا

منظور ہاشمی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(587) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Manzoor Hashmi, Rasta Samundar Ka Jab Ruka Hua Paya in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 18 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Manzoor Hashmi.