Sar Par Thi Kari Dhoop Bass Itna Hi Nahi Tha

سر پر تھی کڑی دھوپ بس اتنا ہی نہیں تھا

سر پر تھی کڑی دھوپ بس اتنا ہی نہیں تھا

اس شہر کے پیڑوں میں تو سایا ہی نہیں تھا

پانی میں ذرا دیر کو ہلچل تو ہوئی تھی

پھر یوں تھا کہ جیسے کوئی ڈوبا ہی نہیں تھا

لکھے تھے سفر پاؤں میں کس طرح ٹھہرتے

اور یہ بھی کہ تم نے تو پکارا ہی نہیں تھا

اپنی ہی نگاہوں پہ بھروسہ نہ رہے گا

تم اتنا بدل جاؤگے سوچا ہی نہیں تھا

کندہ تھے مرے ذہن پہ کیوں اس کے خد و خال

چہرہ جو مری آنکھ نے دیکھا ہی نہیں تھا

منظور ہاشمی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1191) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Manzoor Hashmi, Sar Par Thi Kari Dhoop Bass Itna Hi Nahi Tha in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 18 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Manzoor Hashmi.