Wafoor Shooq Main Jab Bhi Kalam Karte Hain

وفور شوق میں جب بھی کلام کرتے ہیں

وفور شوق میں جب بھی کلام کرتے ہیں

تو حرف حرف کو حسن تمام کرتے ہیں

گھنے درختوں کے سائے کی عمر لمبی ہو

کہ ان کے نیچے مسافر قیام کرتے ہیں

اسے پسند نہیں خواب کا حوالہ بھی

تو ہم بھی آنکھ پہ نیندیں حرام کرتے ہیں

نہ خوشبوؤں کو پتہ ہے نہ رنگ جانتے ہیں

پرند پھولوں سے کیسے کلام کرتے ہیں

رواں دواں ہیں ہوا پر سواریاں کیسی

جنہیں درخت بھی جھک کر سلام کرتے ہیں

چمن میں جب سے اسے سیر کرتے دیکھ لیا

اسی ادا سے غزالاں خرام کرتے ہیں

اب اس کو یاد نہ ہوگا ہمارا چہرہ بھی

تمام شاعری ہم جس کے نام کرتے ہیں

منظور ہاشمی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(416) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Manzoor Hashmi, Wafoor Shooq Main Jab Bhi Kalam Karte Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 18 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Manzoor Hashmi.