Meri Khawahish Hai Mujhe Hashar Talak Apna Rakh

میری خواہش ہے مجھے حشر تلک اپنا رکھ

میری خواہش ہے مجھے حشر تلک اپنا رکھ

سو مری جان،مجھے سیر نہ کر،تشنہ رکھ

راہ گیروں پہ،بڑی گاڑی سے چھینٹے نہ اچھال

جیسی گاڑی ہے میاں،ظرف بھی تو ویسا رکھ

ننھی آنکھوں کے سبھی خواب تو مرجھا گئے تھے

جب کسی نے کہا تھا, بوجھ اٹھا,بستہ رکھ

کوئی لغزش کوئی مستی نہیں تو چھوڑ مجھے

مجھ سے ایسے نہ فرشتوں کی طرح رشتہ رکھ

خوشی کے آنسو اگر دیکھنا ہیں تو مرے دوست

باپ کا روتا ہوا پیشِ نظر چہرہ رکھ

یہ جو کردار ہے شیشے کی طرح ہوتا ہے

صاف دکھتا ہے، اسے الٹا بھلے سیدھا رکھ

مسعود ساگر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(802) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Masood Sagar, Meri Khawahish Hai Mujhe Hashar Talak Apna Rakh in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken Urdu Poetry. Also there are 9 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Masood Sagar.