Woh Dilbari Ka Is Ki Jo Kuch Haal Hai So Hai

وہ دلبری کا اس کی جو کچھ حال ہے سو ہے

وہ دلبری کا اس کی جو کچھ حال ہے سو ہے

اور اپنی دل دہی کا جو احوال ہے سو ہے

مت پوچھ اس کی زلف کی الجھیڑے کا بیان

یہ میری جان کے لیے جنجال ہے سو ہے

نیکی بدی کا کوئی کسی کے نہیں شریک

جو اپنا اپنا نامۂ اعمال ہے سو ہے

پس جائے کوئی ہو یا کہ پامال اس کو کیا

اس گردش فلک کی جو کچھ چال ہے سو ہے

وے ہی علم میں آہوں کے ویسی ہی فوج اشک

اب تک غم و الم کا جو اقبال ہے سو ہے

ایسا تو وہ نہیں جو مرا چارہ ساز ہو

پھر فائدہ کہے سے جو کچھ حال ہے سو ہے

شکوہ مجھے تو سوزن مژگاں سے کچھ نہیں

دل خار خار آہ سے غربال ہے سو ہے

نقش قدم کی طرح حسنؔ اس کی راہ میں

اپنا یہ دل سدا سے جو پامال ہے سو ہے

میر حسن

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(198) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of MEER HASAN, Woh Dilbari Ka Is Ki Jo Kuch Haal Hai So Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 84 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of MEER HASAN.