Sirf Mare Liye Nahi Rehna

صرف میرے لیے نہیں رہنا

صرف میرے لیے نہیں رہنا

تم مرے بعد بھی حسیں رہنا

پیڑ کی طرح جس جگہ پھوٹا

عمر بھر ہے مجھے وہیں رہنا

مشغلہ ہے شریف لوگوں کا

صورت مار آستیں رہنا

دلی اجڑی اداس بستی میں

چاہتے تھے کئی مکیں رہنا

مر نہ جائے تمہاری پھلواری

قریۂ زخم کے قریں رہنا

مسکراتا ہوں عادتاً اسلمؔ

کون سمجھے مرا غمیں رہنا

میر تقی میر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(515) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Mir Taqi Mir, Sirf Mare Liye Nahi Rehna in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 269 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Mir Taqi Mir.