Ab Ju Khaawab Giran Se Jage Hain

اب جو خواب گراں سے جاگے ہیں

اب جو خواب گراں سے جاگے ہیں

پاؤں سر پر رکھے ہیں بھاگے ہیں

خار حسرت بھرے ہیں آنکھوں میں

پاؤں میں خواہشوں کے تاگے ہیں

خوف ہے وسوسے ہیں لیکن شکر

عزم و ہمت جو اپنے آگے ہیں

رخت امید ہے سفر کی جاں

ساز و ساماں تو کچے دھاگے ہیں

تم سے ملنا تو اک بہانہ ہے

ہم تو دراصل خود سے بھاگے ہیں

لاگ لاگے نہیں لگی احمدؔ

ہم جو سوئے تو بھاگ جاگے ہیں

محمد احمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(422) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Mohammad Ahmad, Ab Ju Khaawab Giran Se Jage Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 28 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Mohammad Ahmad.