Juz Rishta Khaloos Yeh Rishta Kuch Or Tha

جز رشتۂ خلوص یہ رشتہ کچھ اور تھا

جز رشتۂ خلوص یہ رشتہ کچھ اور تھا

تم میرے اور کچھ میں تمہارا کچھ اور تھا

جو خواب تم نے مجھ کو سنایا تھا اور کچھ

تعبیر کہہ رہی ہے کہ سپنا کچھ اور تھا

ہم راہیوں کو جشن منانے سے تھی غرض

منزل ہنوز دور تھی رستہ کچھ اور تھا

امید و بیم عشرت و عسرت کے درمیاں

اک کشمکش کچھ اور تھی، کچھ تھا کچھ اور تھا

ہم بھی تھے یوں تو محو تماشائےدہر پر

دل میں کھٹک سی تھی کہ تماشا کچھ اور تھا

جو بات تم نے جیسی سنی ٹھیک ہے وہی

میں کیا کہوں کہ یار یہ قصہ کچھ اور تھا

احمدؔ غزل کی اپنی روش اپنے طور ہیں

میں نے کہا کچھ اور ہے سوچا کچھ اور تھا

محمد احمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(566) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Mohammad Ahmad, Juz Rishta Khaloos Yeh Rishta Kuch Or Tha in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 28 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Mohammad Ahmad.