Kahin Tha Main Mujhe Hona Kahin Tha

کہیں تھا میں مجھے ہونا کہیں تھا

کہیں تھا میں مجھے ہونا کہیں تھا

میں دریا تھا مگر صحرا نشیں تھا

شکست و ریخت کیسی فتح کیسی

کہ جب کوئی مقابل ہی نہیں تھا

ملے تھے ہم تو موسم ہنس دیئے تھے

جہاں جو بھی ملا خنداں جبیں تھا

سویرا تھا شب تیرہ کے آگے

جہاں دیوار تھی رستہ وہیں تھا

ملی منزل کسے کار وفا میں

مگر یہ راستہ کتنا حسیں تھا

جلو میں تشنگی آنکھوں میں ساحل

کہیں سینے میں صحرا جا گزیں تھا

محمد احمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(802) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Mohammad Ahmad, Kahin Tha Main Mujhe Hona Kahin Tha in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 28 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Mohammad Ahmad.