Khud Hi Taslem Bhi Karta Hon Khataien Apni

خود ہی تسلیم بھی کرتا ہوں خطائیں اپنی

خود ہی تسلیم بھی کرتا ہوں خطائیں اپنی

اور تجویز بھی کرتا ہوں سزائیں اپنی

کوئی دیکھے تو ادا کاریاں کرنا اس کا

بند آئینے میں کرتی ہے ادائیں اپنی

میں سخن ور ہوں سو خاموش نہیں رہ سکتا

میں نے آنکھوں میں بسائی ہیں صدائیں اپنی

کیا زمانہ تھا کہ ہم خوب جچا کرتے تھے

اب تو مانگے کی سی لگتی ہیں قبائیں اپنی

مال ہے پاس نہ ہم چرب زباں ہیں محسنؔ

شہر میں کس طرح پھر ساکھ بنائیں اپنی

محسن اسرار

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1413) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Mohsin Asrar, Khud Hi Taslem Bhi Karta Hon Khataien Apni in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 27 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Mohsin Asrar.