Baab Jab Mujh Pey Yeh Khula Qurra E Veerani Ka

باب جب مجھ پہ کھلا قرےۂ ویرانی کا

باب جب مجھ پہ کھلا قرےۂ ویرانی کا

حال پھر دیکھ لیا دشت میں حیرانی کا

مجھ کو اشکوں سے محبت تو نہیں تھی لیکن

دل نے آزار چنا ہجر کی سلطانی کا

عشق وہ کارِ مسلسل ہے کہ جتنا بھی کرو

کوئی نقصان نہیں ہوتا فراوانی کا

حضرتِ قیس کی سنت پہ عمل کرتے ہوئے

فرض کرتا ہوں ادا چاک گریبانی کا

دل کے احوال محبت کو سنانے کے لیے

بخت نے وقت دیا شام کی ویرانی کا

اپنی تصویر سے وہ اتنا کھلا ہے مجھ پر

شائبہ تک نہیں ہوتا کسی عریانی کا

اب مرے ہونٹ ستاروں کی طرح روشن ہیں

ایک بوسہ جو لیا تھا کسی پیشانی کا

مبشر سعید

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(268) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Mubashir Saeed, Baab Jab Mujh Pey Yeh Khula Qurra E Veerani Ka in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken Urdu Poetry. Also there are 57 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Mubashir Saeed.