Safar Ki Dhool Ko Chehray Se Saaf Karta Raha

سفر کی دھول کو چہرے سے صاف کرتا رہا

سفر کی دھول کو چہرے سے صاف کرتا رہا

میں اس گلی کا مسلسل طواف کرتا رہا

یہ میری آنکھ کی مسجد ہے پاؤں دھیان سے رکھ

کہ اس میں خواب کوئی اعتکاف کرتا رہا

میں خود سے پیش بھی آیا تو انتہا کر دی

مجھ ایسے شخص کو بھی وہ معاف کرتا رہا

اور اب کھلا کہ وہ کعبہ نہیں ترا گھر تھا

تمام عمر میں جس کا طواف کرتا رہا

میں لو میں لو ہوں الاؤ میں ہوں الاؤ ندیمؔ

سو ہر چراغ مرا اعتراف کرتا رہا

محمد ندیم بھابھہ

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(322) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Muhammad Nadeem Bhabha, Safar Ki Dhool Ko Chehray Se Saaf Karta Raha in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 56 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Muhammad Nadeem Bhabha.