Raat Itni Ja Chuki Hai Aur Sona Hai Abhi

رات اتنی جا چکی ہے اور سونا ہے ابھی

رات اتنی جا چکی ہے اور سونا ہے ابھی

اس نگر میں اک خوشی کا خواب بونا ہے ابھی

کیوں دیا دل اس بت کمسن کو ایسے وقت میں

دل سی شے جس کے لیے بس اک کھلونا ہے ابھی

ایسی یادوں میں گھرے ہیں جن سے کچھ حاصل نہیں

اور کتنا وقت ان یادوں میں کھونا ہے ابھی

جو ہوا ہونا ہی تھا سو ہو گیا ہے دوستو

داغ اس عہد ستم کا دل سے دھونا ہے ابھی

ہم نے کھلتے دیکھنا ہے پھر خیابان بہار

شہر کے اطراف کی مٹی میں سونا ہے ابھی

بیٹھ جائیں سایۂ دامان احمدؐ میں منیرؔ

اور پھر سوچیں وہ باتیں جن کو ہونا ہے ابھی

منیر نیازی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1223) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Munir Niazi, Raat Itni Ja Chuki Hai Aur Sona Hai Abhi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 130 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Munir Niazi.