Tujh Se Bhichar Kar Kya Hon Main Ab Bahar A Kar Dekh

تجھ سے بچھڑ کر کیا ہوں میں اب باہر آ کر دیکھ

تجھ سے بچھڑ کر کیا ہوں میں اب باہر آ کر دیکھ

ہمت ہے تو میری حالت آنکھ ملا کر دیکھ

شام ہے گہری تیز ہوا ہے سر پہ کھڑی ہے رات

رستہ گئے مسافر کا اب دیا جلا کر دیکھ

دروازے کے پاس آ آ کر واپس مڑتی چاپ

کون ہے اس سنسان گلی میں پاس بلا کر دیکھ

شاید کوئی دیکھنے والا ہو جائے حیران

کمرے کی دیواروں پر کوئی نقش بنا کر دیکھ

تو بھی منیرؔ اب بھرے جہاں میں مل کر رہنا سیکھ

باہر سے تو دیکھ لیا اب اندر جا کر دیکھ

منیر نیازی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(6528) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Munir Niazi, Tujh Se Bhichar Kar Kya Hon Main Ab Bahar A Kar Dekh in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 130 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Munir Niazi.