Adaal Ko Maal E Tijarat Nahi Hone Doon Ga

عدل کو مال تجارت نہیں ھونے دوں گا

عدل کو مال تجارت نہیں ھونے دوں گا

ظلم کی اور حکومت نہیں ھونے دوں گا

مہ کنعاں کی قسم شہر کے بازاروں میں

کبھی بولی کی روایت نہیں ھونے دوں گا

تو ھے شداد طبیعت تو یہ وعدہ ھے مرا

میں تری ملک یہ جنت نہیں ھونے دوں گا

ضرب زنجیر انا زخم بڑھاۓ گی مگر

دل کی دنیا میں بغاوت نہیں ھونے دوں گا

ذرہء خاک میں جب تک یہ نمو باقی ھے

شہر خوش حال سے ھجرت نہیں ھونے دوں گا

شہر کے کچے مکاں اس سے رھیں گے اوجھل

اب میں بادل کو مصیبت نہیں ھونے دوں گا

جو بھی ھوگا وہ ترےحکم سے ھو گا مالک

تیری رحمت کو میں زحمت نہیں ھونے دوں گا

خیر اترے گی دعاؤں سے زمیں پر خاور

فرش پر عرش سے قلت نہیں ھونے دوں گا

مرید عباس خاور

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(867) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Mureed Abbas Khawar, Adaal Ko Maal E Tijarat Nahi Hone Doon Ga in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 8 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Mureed Abbas Khawar.