Hurmat Khawab Hai Kuch Or Barhane Wala

حرمت خواب ھے کچھ اور بڑھانے والا

حرمت خواب ھے کچھ اور بڑھانے والا

زلف کی اوٹ میں تعبیر چھپانے والا

سوکھی پلکوں نےبنا جال گرائے آنسو

دام وحشت!وہ نہیں دام میں آنے والا

ایک شہزادہء بے تخت ھے یہ میرا جنوں

شہر برباد پہ ھے حکم چلانے والا

یا تو دیپک ھے یا پائل کی صدا کا جادو

اور ممکن ھی نہیں آگ لگانے والا

اب یہاں پر ھےکوئی رنگ نہ خوشبو باقی

ھوں بہت دیر سے میں باغ میں آنے والا

ایک صحرا ھے یہ تھر جیسا یا پھر چولستاں

گھر کو آیا نہ کبھی کوئی بسانے والا

زندگی آ کے بچا لے تو ھی اپنا خاور

تنگیء ھجر میں ھے جان لٹانے والا

مرید عباس خاور

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(794) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Mureed Abbas Khawar, Hurmat Khawab Hai Kuch Or Barhane Wala in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 8 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Mureed Abbas Khawar.