Neend Ki Aaghosh Main Ik Neend Ka Ehsaas Bhi Tha

شب کی آغوش میں اک نیند کا احساں بھی تھا

شب کی آغوش میں اک نیند کا احساں بھی تھا

مان لیتا جو ترا ھجر تو امکاں بھی تھا

یہ نہیں تھا کہ مجھے اور سے مطلب تھا کوئ

میرے اندر کوئ اس عشق سے نالاں بھی تھا

اب جو پتھر یلی سی پوشاک میں دکھتا ھے مجھے

وہ کسی اور جہاں میں میرا یزداں بھی تھا

یہ الگ بات مجھے راس نہیں موسم گل

یہ الگ بات چمن,میں تیرا عنواں بھی تھا

پھر شفق رنگ وہ خوشبو کی طرح کا پیکر

پھر میں اک خواب کہ تعبیر پہ حیراں بھی تھا

اب ھوا کو یہ بتائیں بھی تو کب مانے گی

بجھ گیا ھے جو دیا وہ کہیں تاباں بھی تھا

شب ڈھلے ٹوٹ کے بکھرا جو فضا میں خاور

کون سمجھے کہ وھی شام کا مہماں بھی تھا

مرید عباس خاور

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1719) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Mureed Abbas Khawar, Neend Ki Aaghosh Main Ik Neend Ka Ehsaas Bhi Tha in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 8 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Mureed Abbas Khawar.