Sikha Hai Tere Wajd Main Phir Khaakh Pey Hona

سیکھا ہے ترے وجد میں پھر چاک پہ ہونا

سیکھا ہے ترے وجد میں پھر چاک پہ ہونا

اے عشق ! تھا عبرت خس و خاشاک پہ ہونا

میں آتے سمے بخت جنوں دیکھ رہا ہوں

پل بھر ہے مرا مسندِ ادراک پہ ہونا

میں رشک کا ہالہ ہوں سرِ حلقہِ مہتاب

اوروں کو حسد ہو گا یہ افلاک پہ ہونا

شہزادی نہ بن جائے مری جان کا دشمن

اک داغِ جدائی تیری پوشاک پہ ہونا

وجدان کے مہتاب کو خاورؔ یہ گلہ ہے

الہام کے سورج کا بھی افلاک پہ ہونا

مرید عباس خاور

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(981) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Mureed Abbas Khawar, Sikha Hai Tere Wajd Main Phir Khaakh Pey Hona in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 8 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Mureed Abbas Khawar.