Aisay Woh Daastaa’n Khinchtaa Hai

ایسے وہ داستان کھینچتا ہے

ایسے وہ داستان کھینچتا ہے

ہر یقیں پر گمان کھینچتا ہے

تیری فرقت کا ایک اک لمحہ

جسم سے میری جان کھینچتا ہے

جب بھی میں آسماں کو چھونے لگوں

پاؤں کو مہربان کھینچتا ہے

منزل زیست کے کسی بھی طرف

اپنی جانب نشان کھینچتا ہے

میں حقیقت جہاں بھی لکھتا ہوں

وہ وہی داستان کھینچتا ہے

جب حقیقت بیاں کروں اس کی

میرے منہ سے زبان کھینچتا ہے

سر زمین وطن پہ اب وہ نبیلؔ

اپنا ہر سو مکان کھینچتا ہے

نبیل احمد نبیل

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(340) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Nabeel Ahmed Nabeel, Aisay Woh Daastaa’n Khinchtaa Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 51 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Nabeel Ahmed Nabeel.