Zindagi Teri Tamanna Mein Busr Ho Jaye

زندگی تیری تمنا میں بسر ہو جائے

زندگی تیری تمنا میں بسر ہو جائے

اور کیا چاہئے جو بار دگر ہو جائے

درد کی دھوپ ڈھلے آس کا موسم نکھرے

تیرے امکان کا پودا جو شجر ہو جائے

اپنی سچائی کا پھر مجھ کو یقیں آئے گا

زینت دار و رسن میرا جو سر ہو جائے

زندگی کرنے کا آ جائے سلیقہ جو ہمیں

صورت خلد بریں اپنا یہ گھر ہو جائے

مجھ کو بس اتنا ہی سامان سفر کافی ہے

میری منزل ہی مرا رخت سفر ہو جائے

کھل اٹھے پھول کی مانند مقدر میرا

میرے محبوب اگر تیری نظر ہو جائے

حاصل زیست وہی میری تمنا ہے وہی

وہ کسی روز مقدر کا ثمر ہو جائے

غم دنیا سے ملے مجھ کو رہائی اے نبیلؔ

میری آہوں کا اگر اس پہ اثر ہو جائے

کوئی دامن نہ اڑے زرد ہواؤں سے نبیلؔ

گر سہارا جو بشر کا یہ بشر ہو جائے

نبیل احمد نبیل

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(293) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Nabeel Ahmed Nabeel, Zindagi Teri Tamanna Mein Busr Ho Jaye in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 51 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Nabeel Ahmed Nabeel.