Akas Bhi Arsa E Hairan Main Rakha Hua Hai

عکس بھی عرصہ حیران میں رکھا ہُوا ہے

عکس بھی عرصہ حیران میں رکھا ہُوا ہے

کون یہ آئینہ رُو دھیان میں رکھا ہُوا ہے

شام کی شام سے سرگوشی سُنی تھی اک بار

بس تبھی سے تجھے امکان میں رکھا ہُوا ہے

ہاں ترے ذکر پہ اک کاٹ سی اُٹھتی ہے ابھی

ہاں ابھی دل ترے بحران میں رکھا ہُوا ہے

ایک ہی آگ میں جلنا تو ضروری بھی نہیں

ہاں مگر چہرہ وہی دھیان میں رکھا ہُوا ہے

راس آتا ہی نہیں کوئی تعلق ناہید

دلِ خوش فہم مگر مان میں رکھا ہُوا ہے

ناہید ورک

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(965) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Naheed Virk, Akas Bhi Arsa E Hairan Main Rakha Hua Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 74 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Naheed Virk.