Khamshi Gunguna Rahi Hoon Main

خامشی گنگنا رہی ہوں میں

خامشی گنگنا رہی ہوں میں

کیا اداسی چُھپا رہی ہوں میں؟

عشق کی انتہا رہا ہے تُو

حُسن کی انتہا رہی ہوں میں

زندگی کے یہی سِرے ہیں دو

ایک تُو، دوسرا، رہی ہوں میں

تم جو کہتے تھے "ہاں، محبت ہے"

اب وہی آزما رہی ہوں میں

کوئی اور سمت راس ہی نہیں تھی

تیرے رُخ کی ہوا رہی ہوں میں

اپنا ہی راز رکھ نہیں پائی

آئینے کو بتا رہی ہوں میں

تم ہو تو کائنات میری ہے

تم ہو تو جگمگا رہی ہوں میں

تیرے زانو پہ سر رکھا ہُوا ہے

اپنا ہونا منا رہی ہوں میں

تم سے وعدہ کیا تھا، قائم ہوں

دیکھ لو مسکرا رہی ہوں میں

کھا گیا مجھ کو ہجر گُھن کی طرح

تجھ سے کتنا جدا رہی ہوں میں

اک عجب بے دلی سی طاری ہے

خود کو کیا یاد آ رہی ہوں میں؟

کچھ نہیں کیا مرے لیے ترے پاس؟

زندگی دیکھ! جا رہی ہوں میں

ناہید ورک

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(520) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Naheed Virk, Khamshi Gunguna Rahi Hoon Main in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 74 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Naheed Virk.