Koi Hijr Hai Na Visal Hai

کوئی ہجر ہے نہ وصال ہے

کوئی ہجر ہے نہ وصال ہے

سبھی خواہشوں کا یہ جال ہے

مری آنکھ میں جو ٹھہر گیا

تری فرقتوں کا ملال ہے

مرا ہو کے بھی نہ وہ ہو سکا

یہ عجیب صورتِ حال ہے

مجھے آپ نے بھی بُرا کہا

مجھے ہے تو بس یہ ملال ہے

تمہیں صرف اوروں کی فکر ہے

کہ مرا بھی کوئی خیال ہے

مرے حال کو نہ بے حال کر

مرا تجھ سے بس یہ سوال ہے

ناہید ورک

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1272) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Naheed Virk, Koi Hijr Hai Na Visal Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 74 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Naheed Virk.