Koi Kehta Tha K Tari Khud Pey Sochain Maat Kiya Kar

کوئی کہتا تھا کہ طاری خود پہ سوچیں مت کیا کر

کوئی کہتا تھا کہ طاری خود پہ سوچیں مت کیا کر

جو ترا ہے وہ ملے گا، اتنی فکریں مت کیا کر

یہ کسی کے نام کی ترتیب سے بُک شیلف میں ہیں

اک جگہ سے دوسری، میری کتابیں مت کیا کر

باغ میں جا کر پرندوں سے کچھ اپنے دل کی کہہ لے

بند رہ کر کمرے میں بیکار شامیں مت کیا کر

زندہ ہو جاتے ہیں سارے لفظ جو ہم سوچتے ہیں

اس لیے مجھ سے، بچھڑنے والی باتیں مت کیا کر

تُو نے تنہائی کبھی دیکھی ہے؟ خالی پن سُنا ہے؟

گر نہیں تو میرے ملنے کی دعائیں مت کیا کر

ناہید ورک

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(964) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Naheed Virk, Koi Kehta Tha K Tari Khud Pey Sochain Maat Kiya Kar in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 74 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Naheed Virk.