Har Chand Jaisa Socha Tha Waisa Nahi Howa

ہر چند جیسا سوچا تھا ویسا نہیں ہوا

ہر چند جیسا سوچا تھا ویسا نہیں ہوا

لیکن کہا ہوا کا بھی پورا نہیں ہوا

تم ایک گرد باد تھے چکرا کے رہ گئے

ہم سے بھی پار ذات کا صحرا نہیں ہوا

خوشبو کہیں تو پھول ہوا لے اڑی کہیں

یوں منتشر کسی کا قبیلہ نہیں ہوا

سو وسوسوں کی گرد برستی رہی مگر

دل ایسا آئنہ تھا کہ میلا نہیں ہوا

پتھر تھے ہم سو دولت احساس مل گئی

لٹ کر بھی کار دل میں خسارا نہیں ہوا

گزرے دنوں کا روپ تھی اس رت کی دھوپ بھی

سو اس برس بھی غم کا مداوا نہیں ہوا

لوگوں پہ کھل چکے تھے مداری کے گر نجیبؔ

سو کوئی بھی اسیر تماشا نہیں ہوا

نجیب احمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(773) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Najeeb Ahmed, Har Chand Jaisa Socha Tha Waisa Nahi Howa in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 32 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Najeeb Ahmed.