Bahar Aayi Hai Phir Wehshat Ke Saman Hotay Jatay Hain

بہار آئی ہے پھر وحشت کے ساماں ہوتے جاتے ہیں

بہار آئی ہے پھر وحشت کے ساماں ہوتے جاتے ہیں

مرے سینے میں داغوں کے گلستاں ہوتے جاتے ہیں

مجھے بچپن کر کے دل دہی بھی ہوتی جاتی ہے

جفائیں کرتے جاتے ہیں پشیماں ہوتے جاتے ہیں

کہاں جاتا ہے اے دل شکوۂ مہر و وفا کرنے

وہاں بیداد کرنے کے بھی احساں ہوتے جاتے ہیں

نسیمؔ زندہ دل مرنے لگے ہیں خوب رویوں پر

غضب ہے ایسے دانش مند ناداں ہوتے جاتے ہیں

نسیم بھرتپوریھ

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(245) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of NASEEM BHARAT PURI, Bahar Aayi Hai Phir Wehshat Ke Saman Hotay Jatay Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 21 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of NASEEM BHARAT PURI.