Aaj To Be Sabab Odaas Hai Jee

آج تو بے سبب اداس ہے جی

آج تو بے سبب اداس ہے جی

عشق ہوتا تو کوئی بات بھی تھی

جلتا پھرتا ہوں میں دوپہروں میں

جانے کیا چیز کھو گئی میری

وہیں پھرتا ہوں میں بھی خاک بسر

اس بھرے شہر میں ہے ایک گلی

چھپتا پھرتا ہے عشق دنیا سے

پھیلتی جا رہی ہے رسوائی

ہم نشیں کیا کہوں کہ وہ کیا ہے

چھوڑ یہ بات نیند اڑنے لگی

آج تو وہ بھی کچھ خموش سا تھا

میں نے بھی اس سے کوئی بات نہ کی

ایک دم اس کے ہونٹ چوم لیے

یہ مجھے بیٹھے بیٹھے کیا سوجھی

ایک دم اس کا ہاتھ چھوڑ دیا

جانے کیا بات درمیاں آئی

تو جو اتنا اداس ہے ناصرؔ

تجھے کیا ہو گیا بتا تو سہی

ناصر کاظمی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(3633) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Nasir Kazmi, Aaj To Be Sabab Odaas Hai Jee in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 100 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Nasir Kazmi.