Ee Mere Tishna Lab Ghata Hoon Main

اے مرے تشنہ لب، گھٹا ہوں میں

اے مرے تشنہ لب، گھٹا ہوں میں

اے مرے گُل، تری صبا ہوں میں

کیوں ہوا اس کا، جو نہیں ہے مِرا

تجھ سے اے دل بہت خفا ہوں میں

یونہی کب لو دھمال کرتی ہے ؟

تیری درگاہ کا ۔۔۔۔۔ دیا ہوں میں

کاسہِ دست ۔۔۔۔۔ کب ہے پھیلایا ؟

سر سے پاؤں تلک دعا ہوں میں

میری تخلیق ہے جنوں سے ہوئی

تیری ترکیب سے جُدا ہوں میں

جان دیتے ہو میرے شعروں پر؟

آؤ دیکھو ۔۔۔۔غزل سرا ہوں میں

سب کو میں نے سمیٹ رکھا ہے

اپنے بچوں کا گھونسلا ہوں میں

نسرین سید

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(461) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Nasreen Syed, Ee Mere Tishna Lab Ghata Hoon Main in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 54 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Nasreen Syed.