Kahan Ka Lutf Marasam Main Gar Jafa Hi Nahi

کہاں کا لطف، مراسم میں گر جفا ہی نہیں

کہاں کا لطف، مراسم میں گر جفا ہی نہیں

ستم نہ ہو تو محبت میں کچھ مزا ہی نہیں

لکھا گیا ہے مقدر میں شہرِ دل کے یہی

اجڑ گیا ہے جو اک بار، پھر بسا ہی نہیں

وہ اشک جس کو نہ دامن کوئی نصیب ہوا

وہ اشک ، گوہرِ نایاب میں ڈھلا ہی نہیں

تمہارے لوٹ کے آنے کی آس کیا ٹوٹی

پھر اس کے بعد دیا طاق پر دھرا ہی نہیں

جکڑ لیا ۔۔۔۔۔۔۔۔ کسی آسیب نے مرے دل کو

ہے کیسا شہرِ خموشاں ، کوئی صدا ہی نہیں

یہ زندگی بھی عجب رہ گزار ہے نسرینؔ

بچھڑ گیا جو یہاں، پھر کبھی ملا ہی نہیں

نسرین سید

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(544) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Nasreen Syed, Kahan Ka Lutf Marasam Main Gar Jafa Hi Nahi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 54 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Nasreen Syed.