Sukhanwar K Naam

سخنور کے نام ۔۔۔۔۔۔۔

اشک کی سبیلوں پر

شام کی فصیلوں پر

درد کے گھنے سائے

جب اترنے لگتے ہیں

زندگی سسکتی ہے

دل تڑپ کے روتا ہے

اس طرح بھی ہوتا ہے

حادثے گزرتے ہیں

سانحے گزرتے ہیں

آرزوؤں کے موتی

ٹوٹ کر بکھرتے ہیں

پھر نہ نیند آتی ہے

پھر نہ کوئی سوتا ہے

اس طرح بھی ہوتا ہے

ایسے درد موسم میں

ایسے سرد موسم میں

ایسے زرد موسم میں

کاروانِ ہستی میں

رنج و غم کی بستی میں

کوئی دلربا ایسا

کوئی آشنا ایسا

دل کے سارے زخموں کو

اپنے نرم لفظوں سے

ایسے مندمل کر دے

منجمد لہو میں جو

اپنے گرم جذبوں کی

جیسے آگ سی بھر دے

زندگی کے آنگن میں

چاندنی سی کھل جائے

جیسے سوختہ جاں کو

زندگی سی مل جائے

تُو ہے چارہ گر ایسا

دل کے بکھرے ٹکڑوں کو

چن کے جوڑ دیتا ہے

رنج و غم کے طوفاں کا

رخ ہی موڑ دیتا ہے

یوں تو لفظ ہیں سارے

جو قلم نے لکھا ہے

شاعری مگر تیری

زندگی کا قصہ ہے

حرف کے مسیحا سن

درد کے شناسا سن

ہم کو تیرے لفظوں کا

مان رکھنا آتا ہے

لفظ جو کہ حرمت ہیں

لفظ جو صداقت ہیں

لفظ جو کہ نشتر ہیں

لفظ جو کہ مرہم ہیں

لفظ شعبدہ بھی ہیں

لفظ معجزہ بھی ہیں

یہ حسین لفظوں کا معجزہ مبارک ہو

روح تک پہنچنے کا راستہ مبارک ہو

نسرین سید

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(465) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Nasreen Syed, Sukhanwar K Naam in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 54 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Nasreen Syed.