Wafoor E Gham Ko Matai E Hunar Banati Hai

وفورِ غم کو۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ متاع ہنر بناتی ہو

وفورِ غم کو۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ متاع ۔ ہنر بناتی ہوں

ہیں راس گردشیں مجھ کو، بھنور بناتی ہوں

ہوئی ہیں مدتیں ، بے لاگ بات لکھے ہوئے

جو سننا چاہیں سبھی ۔۔۔۔۔۔ وہ خبر بناتی ہوں

کہیں سہارا۔۔۔۔۔۔۔ کہیں راستہ، ضرورت ہے

سو دیکھ بھال کے۔۔۔۔ دیوار و در بناتی ہوں

جو کج کلاہوں کو درکار ہیں، ملیں گے نہیں

جو زیبِ دار ہوں ، میں ایسے سر بناتی ہوں

کشاں کشاں لیے جاتا ہے منزلوں کی طرف

جنونِ عشق کو۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ زاد سفر بناتی ہوں

چراغ پہلے بناتی ہوں۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ روشنی کے لیے

پھر ان کے رکھنے کو میں بام و در بناتی ہوں

ہے آندھیوں کے مقابل یہ گھر، مگر نسرینؔ

وہ جتنی بار گراتی ہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔ گھر بناتی ہوں

نسرین سید

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(388) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Nasreen Syed, Wafoor E Gham Ko Matai E Hunar Banati Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 54 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Nasreen Syed.