Gharon Mein Sabza Chaton Par Gul Sahab Liye

گھروں میں سبزہ چھتوں پر گل سحاب لیے

گھروں میں سبزہ چھتوں پر گل سحاب لیے

ہوائیں پھیل گئیں نقش و رنگ آب لیے

شب سیاہ ڈھلی صبح آشکار ہوئی

جبیں پہ زخم لیے ہاتھ میں گلاب لیے

میں ایک ڈھلتا سا سایا زمیں کے قدموں میں

تو ڈھونڈنے مجھے نکلا ہے آفتاب لیے

گزر گیا کوئی پہچانتا ہوا مجھ کو

پرانی یادوں کی شمعیں پس نقاب لیے

بکھر کے جاتا کہاں تک کہ میں تو خوشبو تھا

ہوا چلی تھی مجھے اپنے ہم رکاب لیے

ابھر رہے ہیں کئی ہاتھ شب کے پردے سے

کوئی ستارہ لیے کوئی ماہتاب لیے

ہوائیں پھرتی ہیں رستوں میں بال کھولے ہوئے

یہ رات سر پہ کھڑی ہے کوئی عذاب لیے

عجب نہیں کہیں تعبیر کوئی مل جائے

بھٹک رہا ہوں گرہ میں ہجوم خواب لیے

نذیر قیصر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(469) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Nazeer Qaisar, Gharon Mein Sabza Chaton Par Gul Sahab Liye in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 34 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Nazeer Qaisar.