Phir Goya Hui Shaam Parindon Ki Zabani

پھر گویا ہوئی شام پرندوں کی زبانی

پھر گویا ہوئی شام پرندوں کی زبانی

آؤ سنیں مٹی سے ہی مٹی کی کہانی

واقف نہیں اب کوئی سمندر کی زباں سے

صدیوں کی مسافت کو سناتا تو ہے پانی

اترے کوئی مہتاب کہ کشتی ہو تہہ آب

دریا میں بدلتی نہیں دریا کی روانی

کہتا ہے کوئی کچھ تو سمجھتا ہے کوئی کچھ

لفظوں سے جدا ہو گئے لفظوں کے معانی

اس بار تو دونوں تھے نئی راہوں کے راہی

کچھ دور ہی ہم راہ چلیں یادیں پرانی

ندا فاضلی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(459) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Nida Fazli, Phir Goya Hui Shaam Parindon Ki Zabani in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 158 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Nida Fazli.