Tanha Tanha Dukh Jhelen Ge Mehfil Mehfil Ghaein Ge

تنہا تنہا دکھ جھیلیں گے محفل محفل گائیں گے

تنہا تنہا دکھ جھیلیں گے محفل محفل گائیں گے

جب تک آنسو پاس رہیں گے تب تک گیت سنائیں گے

تم جو سوچو وہ تم جانو ہم تو اپنی کہتے ہیں

دیر نہ کرنا گھر آنے میں ورنہ گھر کھو جائیں گے

بچوں کے چھوٹے ہاتھوں کو چاند ستارے چھونے دو

چار کتابیں پڑھ کر یہ بھی ہم جیسے ہو جائیں گے

اچھی صورت والے سارے پتھر دل ہوں ممکن ہے

ہم تو اس دن رائے دیں گے جس دن دھوکا کھائیں گے

کن راہوں سے سفر ہے آساں کون سا رستہ مشکل ہے

ہم بھی جب تھک کر بیٹھیں گے اوروں کو سمجھائیں گے

ندا فاضلی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(847) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Nida Fazli, Tanha Tanha Dukh Jhelen Ge Mehfil Mehfil Ghaein Ge in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 158 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Nida Fazli.