Yeh Khlaq Jab Talab Jah Main Pari Hui Thi

یہ خلق جب طلب جاہ میں پڑی ہوئی تھی

یہ خلق جب طلب جاہ میں پڑی ہوئی تھی

تو میری ذات تری چاہ میں پڑی ہوئی تھی

تو اپنی بے خبری میں جہاں سے گزرا تھا

یہ میری عمر وہیں راہ میں پڑی ہوئی تھی

کہیں بھی دور تک اس کا کوئی نشان نہ تھا

وہ صرف میری طلب گاہ میں پڑی ہوئی تھی

میں لفظ ڈھونڈھتا رہتا تھا جس کے کہنے کو

وہ ساری بات مری آہ میں پڑی ہوئی تھی

میں خود کو لگ رہا تھا چودھویں کی شب جیسا

کہ میری جان بھی اک ماہ میں پڑی ہوئی تھی

عبیدالرحمن نیازی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(511) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Obaidurrahman Niyazi, Yeh Khlaq Jab Talab Jah Main Pari Hui Thi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Heart Broken, Birthday, Hope Urdu Poetry. Also there are 14 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Heart Broken, Birthday, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Obaidurrahman Niyazi.