Kon Si Woh Shama Thi Jis Ka Mein Parwana Howa

کون سی وہ شمع تھی جس کا میں پروانہ ہوا

کون سی وہ شمع تھی جس کا میں پروانہ ہوا

اور پھر لو بھی لگی ایسی کہ دیوانہ ہوا

ساقیٔ سر مست سے جب تک کہ لینے کو بڑھوں

ہاتھ سے گرتے ہی چکنا چور پیمانہ ہوا

دل حریم ناز سے لے کر تو ہم نکلے مگر

ہو گیا عالم کچھ ایسا سب سے بیگانہ ہوا

خیر تھی الفت میں دل نے رنگ کچھ بدلا نہ تھا

اب تماشہ دیکھئے گا وہ بھی دیوانہ ہوا

ہم نے جانے کیا کہا لوگوں نے کیا سمجھا اسے

سرگزشت درد دل تھی جس کا افسانہ ہوا

فیض ساقی نے بدل دی صورت دل اور ہی

پہلے پیمانہ تھا پیمانہ سے مے خانہ ہوا

میرے لب تک آتے آتے کیوں چھلک جاتا ہے شوقؔ

جام رنگیں ساغر مل یا کہ پیمانہ ہوا

پنڈت جگموہن ناتھ رینا شوق

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(261) ووٹ وصول ہوئے

پنڈت جگموہن ناتھ رینا شوق کی مزید شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of PANDIT JAGMOHAN NATH RAINA SHAUQ, Kon Si Woh Shama Thi Jis Ka Mein Parwana Howa in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 24 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of PANDIT JAGMOHAN NATH RAINA SHAUQ.