Mujh Se Kehte Ho Kya Kahin Gay Ap

مجھ سے کہتے ہو کیا کہیں گے آپ

مجھ سے کہتے ہو کیا کہیں گے آپ

جو کہوں گا تو کیا سنیں گے آپ

کیا بیان شب فراق کریں

نہ سنا ہے نہ اب سنیں گے آپ

نہیں کھلتا سبب تبسم کا

آج کیا کوئی بوسہ دیں گے آپ

ناصحا آپ خود ہی ناداں ہیں

کیا نصیحت مجھے کریں گے آپ

دم آخر یہ تھا مرے لب پر

کس پہ جور و ستم کریں گے آپ

ظلم کی کچھ بھی انتہا ہوگی

یا ہمیشہ ستم کریں گے آپ

منتظر ہیں تمہارے مدت سے

دیکھیے ہم سے کب ملیں گے آپ

درد نا گفتہ بہ ہو جب ساقی

وہ سنیں بھی تو کیا کہیں گے آپ

پنڈت جواہر ناتھ ساقی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(888) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of PANDIT JAWAHAR NATH SAQI, Mujh Se Kehte Ho Kya Kahin Gay Ap in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Islamic Urdu Poetry. Also there are 43 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Islamic poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of PANDIT JAWAHAR NATH SAQI.