Dhoop Saat Rangon Main Phelti Hai Aankhon Par

دھوپ سات رنگوں میں پھیلتی ہے آنکھوں پر

دھوپ سات رنگوں میں پھیلتی ہے آنکھوں پر

برف جب پگھلتی ہے اس کی نرم پلکوں پر

پھر بہار کے ساتھی آ گئے ٹھکانوں پر

سرخ سرخ گھر نکلے سبز سبز شاخوں پر

جسم و جاں سے اترے گی گرد پچھلے موسم کی

دھو رہی ہیں سب چڑیاں اپنے پنکھ چشموں پر

ساری رات سوتے میں مسکرا رہا تھا وہ

جیسے کوئی سپنا سا کانپتا تھا ہونٹوں پر

تتلیاں پکڑنے میں دور تک نکل جانا

کتنا اچھا لگتا ہے پھول جیسے بچوں پر

لہر لہر کرنوں کو چھیڑ کر گزرتی ہے

چاندنی اترتی ہے جب شریر جھرنوں پر

پروین شاکر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(579) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Parveen Shakir, Dhoop Saat Rangon Main Phelti Hai Aankhon Par in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 110 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Parveen Shakir.