Khushk Aankhon Ki Kahani Dasht Dasht Apni Hi Thi

خشک آنکھوں کی کہانی دشت دشت اپنی ہی تھی

خشک آنکھوں کی کہانی دشت دشت اپنی ہی تھی

نم ہواؤں میں صدائے بازگشت اپنی ہی تھی

ڈھونڈتے پھرتے رہے تھے سایہ سایہ زندگی

دھوپ کی گلیوں میں صبح و شام گشت اپنی ہی تھی

جاگتی رہتی تھیں آنکھیں خانہ خانہ خوف خوف

خواب کی روشن نمائی طشت طشت اپنی ہی تھی

جنگلوں سے شہر تک شانہ بہ شانہ پشت پشت

سلسلہ کرتی ہوئی وہ سر گذشت اپنی ہی تھی

میری خوش طبعی نہ تھی روئے غریب شہر ہاں

شہر یاروں میں مزوج خوئے زشت اپنی ہی تھی

کرتے تھے پرویزؔ رحمانیؔ اجالے گل کشید

شب گرفتہ وادیوں میں خار گشت اپنی ہی تھی

پرویز رحمانی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(389) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of PARWEZ RAHMANI, Khushk Aankhon Ki Kahani Dasht Dasht Apni Hi Thi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 32 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of PARWEZ RAHMANI.