بند کریں
شاعری عبدالحمید عدم

مسکرا کر خطاب

-

Muskra ker khitaab kerte ho


(257) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان