بند کریں
شاعری اعتبار ساجد

تھی جس سے روشنی وہ دیا بھی نہیں رہا

-

Thi jis sey roshni


(331) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان