بند کریں
شاعری اشرف جاوید

ٹوٹا ہے خواب اور ہیں آنکھیں لہو لہو

-

tota hai khawab hain or ankhain lahu lahu


(270) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان